Episode 17

اب عابدہ کو جیسے وہ کہتے عابدہ بھی ویساہی کرتی اور اس کی نظر میں شہزاد سب سے بڑا دشمن بن گیا۔ اس کی وجہ صرف یہی تھی کہ وہ لوگ اس کے ہمیشہ کسی نہ کسی بات میں الجھا کر شہزاد کا امتحان لینے کو کہتے جس پر وہ جھوٹی ثابت ہوتی تو شہزاد […]

Episode 16

شہزاد ان کی یہ چال اچھی طرح سمجھتا تھا مگر کیا کرتا  باپ سے لڑتا یا چاچا سے؟ اور اب لڑنے کا کوئی مقصد بھی تو نہیں تھا۔دونوں ایسے رشتے تھے جس کا احترام فرض تھا وہ سوائے چپ رہ کر ان لوگوں کی چالوں  کو دیکھنے کے کچھ بھی نہیں کر سکتا تھا جس […]

Episode 15

آپ بہت اچھے اور نیک لوگ ہیں اس لیے اگر  آپ لوگ اس کے حالات بہتر ہونے کا انتظار کر سکتے ہیں تو ایک دُو سال انتظارکریں۔یہ آپ کااحسان ہو گا۔ جس پر ملک رفیق اور اس کی بیوی نے کہا کہ آپ تسلی رکھیں ہم سب جانتے ہیں اگر اللہ نے چاہا تو ہم […]

Episode 14

یہ ان دنوں کی بات ہے جب عابدہ کے رشتے کی بات چل رہی تھی تو  ساتھ ہی شہزاد کے رشتے کی بات بھی  عبدالغفور کی خالہ کے گھر ہی چل رہی تھی جنہوں نے خالدہ کا رشتہ مانگا تھا۔ اور یہ وہ وقت تھا جب گھر میںیہی باتیں ہو رہی تھیں شہزاد اور عابدہ […]

Episode 13

اور اس کی یہ بات کرنے کے فوراً  بعد شہزاد کا باپ بھی یہی بات دہراتا ہے کہ ہم ان سے چکلے چلوائیں گے تم کون ہوتے ہو ہمارے سامنے بولنے والے۔ باپ کی آواز کانوں میں پہنچتےہی شہزاد کے پیروں تلے سے زمین نکل جاتی ہے اور اس کو چکر آنے لگتےہیں کہ ایک […]

Episode 12

ابھی ایک ہی دن گزرا تھا کہ رات کے 7بجے عبدالغفور  بیٹے کو فون کر کے  ہنستے ہوئے انداز میں کہا کہ بیٹا  میں تمہارے چاچا کے آگے نہیں بول سکا اور میں شادی کی تاریخ پکی کرنے لگا ہوں اس لیے تم بھی اب کوئی بات نہ کرنا۔ جب وہ فون پر بات کر […]

Episode 11

یوں اس شخص نے سب کو بلیک میل کر کے اپنا مطلب سیدھا کرنے کی کوشش کی۔میرا کیا ہے چار دن خوبصورت لڑکی کے ساتھ بھی گزار لوں گا اور عابدہ کو طلاق دلوا کر ان کے نانا  ملکشفیع سے بدلہ بھی پورا ہو جائے گا کیوں کہ یہ سب بہن بھائی اپنے ننیال والوں […]

Episode 10

یہ سب جانتے ہوئے کہ بیٹی بھی دلی طور پر راضی نہیں ہے تو بیوی کے سامنے انکار نہ کر سکا اور اس کی باتوں میں آ کر جھٹ پٹ منگنی نکاح کی تاریخ مقرر کر دی۔اوراپنی بڑیبیٹی کو اکیلا چھوڑ دیا دہکتے ہوئے ریگستان میں ایسی ذات جو رشتہ کے وقت بات تک نہ […]

Episode 9

“جِیدا دِل ٹُٹ جائے، جِیدی گَل مُک جائے، جِینوں چوٹ لگے اُو  جانے” باپ کی مار کے بعد ننیال کا ہاتھ سر پہ  پڑنا زخم پر نمک چھڑکنے اور باپ کے خلاف جزبات کو ابھارنے سے کم نہیں تھا۔جب باپ بیٹوں کو مارتا تو ننیالکےآنسو بہتے اوریہ کہ کر انہیں صبر دیتے کہ کبھی وہ […]

Episode 8

اب انہیں لگنے لگا کہ ہم مار  تو ویسے بھی دیے جائیں گے توفاروق نے کہا کہ میں تو اس چوتھی منزل سے چھلانگ لگا کر خود کشی کر لیتاہوں مجھ سے یہ مار برداشت نہیں ہوگی عبدالغفور نے کہا نہیں ہم بے قصور ہیں ہمیں بھلا ایسے کیوں ماریں گے۔تومصطفٰی کہتا ہے پاگل انسان […]

Next Page » « Previous Page